چھبیس مئی 1930 کو لاہور میں پیدا ہونے والے قاضی واجد پاکستانی شوبز سے پانچ دہائیوں سے جڑے ہوئے تھے انہوں نے اپنے کریئر کا آغاز 1956 میں ریڈیو سے کیا اور پی ٹی وی کے آغاز کے ساتھ ہی اس کا حصہ بنے اور متعدد سدابہار ڈراموں کے ذریعے خود کو منوایا۔ان کے کریڈٹ میں خدا کی بستی، حوا کی بیٹی، باادب باملاحظہ ہوشیار، دھوپ کنارے، مرزا غالب بندر روڈ پر، تنہائیاں، پل...

بھارت میں 17 اکتوبر بروز ہفتہ سہ پہرمسلم پرسنل لا بورڈ کے جنرل سیکریٹری مفتی نظام الدین کا انتقال ہو گیا۔ جس سے پورے بھارت کی مسلم برادری میں ایک سوگ کی کیفیت طاری ہو گئی ۔ مفتی نظام الدین کی عمر نواسی (89)برس تھی ۔ وہ بہار میں ضلع گیا کے گھوری گھاٹ سے تعلق رکھتے تھے۔ اُن کی تاریخ پیدائش 31 مارچ 1927 تھی۔ اُنہوں نے 1942 ء میں دارلعلوم دیوبند سے...

انسانی تاریخ میں ہمیشہ عورت عتاب کاشکار رہی ہے اور جب کائنات تخلیق ہوئی تو پہلا قتل بھی ایک عورت کی وجہ سے ہوا عورت اس کائنات کی خوبصورت تخلیق ہے۔ عورت کی وجہ سے ہی یہ دنیا حسین اور پرکشش ہے اگر عورت کا وجود نہ ہو تو شاید کائنات کا وجود ہی ختم ہوجائے پیارے پاکستان کے قیام کے وقت محمد علی جناح کے ساتھ بھی خواتین کھڑی ہوگئیں ۔فاطمہ جناح اور...

بالآخر انتظار حسین بھی چلے گئے اور اردو ادب کا دامن مزید سکڑ گیا۔ وہ چراغ جو 7 دسمبر 1923ء کو بلند شہر میں روشن ہوا تھا، اپنی پوری آب و تاب پر آنے کے بعد فروری 2016ء میں لاہور میں بجھ گیا۔ بوقت انتقال انتظار حسین کی عمر 92 سال تھی۔ انتظار حسین قیام پاکستان کے بعد لاہور آئے، اردو میں ماسٹرز کرنے کے بعد صحافت سے وابستہ ہوئے۔ ان کی طویل ترین...

محمد تقی المعروف میر تقی میر آج سے دوسو پانچ برس پہلے اس دنیا سے کوچ کر گئے تھے۔ مگر کہاں گئے تھے ۔ وہ اگلی کئی صدیوں تک زندہ ، تابندہ رہیں گے۔ اردو زبان میں اُن کے متعلق یہ جملہ بلاتردد بولا جاسکتا ہے کہ وہ اس زبان کے سب سے بڑے شاعر ہیں۔ اُن کے علاوہ اردو کی پوری شعری روایت میں کبھی ، کسی بھی شاعر کو خدائے سخن نہیں...

تحریر: محمد طارق فاروقی جدید اردو ادب کی تاریخ کے بے مثال شاعر اور بے بدل نقاد سلیم احمد ۲۷؍ نومبر ۱۹۲۷ء کو ضلع بارہ بنکی کے ایک قصبے کھیولی میں پیدا ہوئے۔ اور یکم ستمبر ۱۹۸۳ء کو کراچی میں وفات پاگئے۔سلیم احمد نے اپنے آبائی قصبے کھیولی سے ہی میٹرک کیا اور میرٹھ کالج میں داخلہ لیا جہاں اُن کے مراسم پروفیسر کرار حسین ،محمد حسن عسکری، ڈاکٹر جمیل جالبی اور انتظار حسین سے...

معروف شاعر اقبال عظیم 8 جولائی 1913ء کو میرٹھ میں پیدا ہوئے ۔اُن کے والدسید مقبول عظیم کا تعلق سہارن پور سے تھا۔ خود لکھنؤ اور اودھ میں پروان چڑھے ۔لکھنؤ یونیورسٹی سے 1934ء میں بی اے کی سند حاصل کی۔ پھر آگرہ چلے گئے جہاں سے 1943ء میں آگرہ یونیورسٹی سے ایم اے کی سند حاصل کی۔اُنہیں ڈھاکا یونیورسٹی سے ریسرچ اسکالر شپ ملی اور ’’ٹیچرز ٹریننگ کالج ، لکھنؤ‘‘ سے تدریسی تربیت...

انجم زمرودہ حبیب اسلام آباد (اننت ناگ) سے تعلق رکھنے والی ایک ایسی خاتون ہیں جنہوں نے 80ء کی دہائی میں ہی وومینز ایسوسی ایشن بنائی تھی، جہاں سے وہ خواتین کے مختلف سماجی مسائل کو حل کرنے میں ایک کردار ادا کررہی تھی۔ اعلیٰ تعلیم یافتہ زمردہ جی، حنفیہ کالج اسلام آباد میں اس وقت ایک معلمہ کی حیثیت سے کام کررہی تھیں، جب کشمیری مردو زن سڑکوں پر نکل آئے اور پوری...

کل بھی بھٹو زندہ تھا آج بھی بھٹو زندہ ہے "جب یہ نعرہ سندھ سے پختون خوا ہ تک گونجتا ہے تو اکیسویں صدی کے آغاز میںپیدا ہونے والی یہ نسل سوال کر تی ہے کہ کہ بھٹو کیوں زندہ ہے ؟انہیں بتائیے کہ ہماری تاریخ کا یہ عظیم کردار لازوال کیوں ہے ، بھٹو کیوں زندہ ہے ؟ بات چند سالوں کی نہیں تاریخ ایک صدی کی ہے ۔ جناب ذوالفقار علی بھٹو 5جنوری...

یوں تو پاکستان کی سیاست میں مہاجر فیکٹر قیام پاکستان کے بعد سے آج تک کسی نہ کسی انداز میں اثر انداز رہا ہے لیکن 1980ء کی دہائی میں آل پاکستان مہاجر اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن کے قیام کے بعد سے ملکی سیاست میں مہاجر فیکٹر کا ایک نیا دور شروع ہوا ۔پھر مہاجر قومی موومنٹ بنی جو بعد ازاں متحدہ قومی موومنٹ میں ڈھل گئی اور اب متحدہ قومی موومنٹ پاکستان اور متحدہ قومی موومنٹ...
اشتہارات