اکتوبر 2002 ء میں پرویز مشرف کے جرنیلی استبداد کا سورج النصف النہار پر تھا ۔ ماحول کیا ہوگا اور امکانات کا رُخ کس جانب ہوگا ۔ جب کُہرا پھیلا لگتا ہو سورج بھی میلا لگتا ہو ہر شخص اکیلا لگتا ہو سمجھو یہ کہ بستی اُجڑے گی کپتان میانوالی کے سنگلاخ پہاڑوں اور دریائے کرم کے پہلو میں آباد آریاؤں کی قدیم بستی کنڈل اور بابر شاہ کی گذر گاہ عیسیٰ خیل میں اپنی انتخابی مہم میں مصروف تھے...

رہی آٹھ رکعات والی حدیث جو بخاری شریف میں ہے اور سند کے اعتبار سے بہت قوی ہے جس کی روای حضرت عائشہ ؓ ہیں اور جس پردور حاضر میں ہمارے بھائی اہلحدیث عمل کرتے ہیں اورعلمائِ اہلحدیث کا دعویٰ ہے کہ یہ روایت تراویح اور تہجدکے متعلق ہے جبکہ مقلدین اسے تہجد پر محمول کرتے ہیں ۔سلف میں سے بہت سے کبار علماء اور ائمہ بیس کے ساتھ ساتھ آٹھ رکعت کے بھی قائل...

بلوچستان  کے اندر ابن الوقت سیاست دانوں کی کوئی کمی نہیں، جن کی نظریں خالصتاً اقتدار اور مفادات پر جمی رہتی ہیں۔ بدعہدی، دغا اور چال بازیوں کو سیاست، جمہوری اصول اور روایات کا نام دیا جاتا ہے۔ یہ لوگ مقتدر حلقوں کے اشاروں پر اپنا قبلہ تبدیل کرتے رہتے ہیں۔ ایک بڑی تعداد ان موقع پرستوں کی نئی جماعت میں جمع ہوگئی ہے، یعنی بلوچستان میں سیاست کے نام پر مستقبل کی پیش...

جب کسی قوم کے عقل وشعورمیں بگاڑ آجاتا ہے اور وہ فی الفور ہوش کے ناخن نہ لے توتسلسل کے ساتھ بگڑ تی چلی جاتی ہے یہاں تک کہ وہ بے عقلی اور بے شعوری کے کاموں کو بھی عقلمندی کے کام سمجھنے لگتی ہے ،یہی حال ہمارا ہے ۔ہم بگاڑ میں اتنے آگے نکل چکے ہیں کہ اب مذہب اور اس کے احکام بھی ہمارے اس ظلم سے نہیں بچ پاتے ہیں اسکی...

امریکی صدر ٹرمپ نے بالآخرپورے عالم اسلام کی دشمنی لیکراپنے سفارتخانے کا مقبوضہ فلسطین (غزہ) کی سرزمین پر گذشتہ دنوںافتتاح کر ہی ڈالاایسی قرارداد تو سابق ادوار میں ہی امریکی حکمرانوں نے پاس کر رکھی تھی مگر کسی سابقہ امریکی صدر کوایسی اسلام دشمنانہ حرکت کی جرآت نہ ہوتی تھی کہ ملت اسلامیہ ایسے عمل کا سخت رد عمل دے گی مگرٹرمپ کے دور میں امریکن بر بریت اور دہشت گردی کھل کر دنیا کے...

سیاست اور سماج کی رُت کیسی ہی رہی ہو، موسم کتنابھی بے فیض اور ناسازگار کیوں نہ ہو ،کالم نگارنے کتھا بیان کرنے میں اس قدر زیادہ سُستی یا تامل سے کبھی کام نہیں لیا۔ لیکن گزشتہ تین ہفتوں سے کچھ لکھا ہی نہیں گیا ۔کافی دن سفر کی نذر ہوئے ۔ لکھنے پڑھنے کے کمرے میں سانپ گھُسا پھر واپس چلا گیا یا غائب ہو گیا لیکن اُس کا خوف چھ سات دن...

افغانستان کے غیر یقینی حالات پاکستان پر بُری طرح اثر انداز ہیں افغانستان سے ملحق طویل سر حد غیر محفوظ ہے ۔اور یہ صورتحال حال پاکستان کے لیے باعث تشویش ہے ان سرحدوں کی کماحقہ نگرانی و حفاظت یقینی بنائی جاتی ہے تو دہشت گرد عملیات اور ان کے کُل پرزوں پر قابو پایا جا سکتا ہے ۔اس مقصد کے تحت پاک افغان سرحد پر پنجپائی کے مقام پر آہنی باڑ کی تنصیب کا کام...

انتخابات  کی تاریخ جب قریب آتی ہے تو ہر شخص اس سوچ میں غرق ہو جاتا ہے کہ اپنا قیمتی ووٹ کس کو دے؟کس امیدوار کے انتخابی نشان پر اپنی تصدیقی مہر ثبت کریں ؟کس کو راہنما مانے؟اپنی رائے کس کے حق میں استعمال کرے؟عوام پر واضح رہنا چاہیے کہ ووٹ صرف کاغذ کی پرچی نہیں جو بغیر سوچے سمجھے مہر لگا کر کسی کے بھی حق میں ڈال دی جائے بلکہ یہ آپ...

’’پروفیسر محمد رفیع بٹ کی شہادت‘‘کے بعدبھارتی میڈیا نے چپ سادھ لی ہے جبکہ 1990ء سے لیکر 2013ء تک یہ تاثر دیا گیا کہ کشمیر کی جہادی تنظیموں میں شامل نوجوانوں کی اکثریت جاہلوں یا کم لکھے پڑھے لوگوں کی ہے حالانکہ یہ تاثر تب بھی غلط تھا اور یہ بحث آج بھی سرے سے غلط اور بیکار ہے۔ سوشل میڈیا کے ذرائع سے پریشان نئی دہلی کا کورپٹ میڈیا یہ سب چھپانے کی...

آج کل ہر گلی اور گھر میں ایک ہی موضوع پر بحث جاری ہے کہ پروفیسر محمد رفیع بٹ نے اعلیٰ ترین سرکاری نوکری چھوڑ کر انتہائی پر خطر راستہ کیوں اختیار کیا تھا؟کوئی کہتا ہے یہ مایوسی کی علامت ہے کہ ایک پی،ایچ،ڈی اسکالر اچھی نوکری ملنے کے بعد اس کو ٹھوکر مار کر وہ راستہ اختیار کرے جس کے قدم قدم پر موت سایے کی طرح پیچھا کرتی ہے ۔کوئی کہتا ہے کہ...
اشتہارات