نسل نو کا رشتہ دین کے ساتھ مضبوطی سے جوڑنا ہوگا، جسٹس (ر) انور ظہیر جمالی

بے ایمانی، بد عنوانی، سفارش، جعلی ڈگریوں قابلیت و ہنرمندی کی ناقدری کے موجودہ کلچر سے نجات ضروری ہے۔ روز مرہ زندگی میں سچائی ، پرہیزگاری، خلوص، امانت، اخلاقیات اور دوسروں کا خیال رکھنے کے اسلامی رجحانات کو فروغ دے کر ہم معاشرتی برائیوں پر قابو پاسکتے ہیں۔ مساجد بہترین تربیت گاہ ہیں۔نسل نو کا رشتہ دین کے ساتھ مضبوطی سے جوڑنا ہوگا۔ ان خیالات کا اظہار سابق چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس (ر) انور ظہیر جمالی نے گذشتہ روز بزم کرن ( سوسائٹی فار دی پریونشن آف وے وارڈ نیس ) کے دسویں یوم تاسیس کی تقریب کے شرکاء سے بحیثیت مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے کیا۔ صدارت عفیف گروپ کے چیئر مین راشد احمد صدیقی نے کی۔ اس موقع پر بزم کرن کے صدر ظفر اقبال ، جنرل سیکریٹری کرنل (ر) اطہر علی خان ، ایئر کموڈور شبیر احمد خان ، جسٹس (ر) مشتاق اے میمن ، وائس چانسلر سر سید یونیورسٹی ا?ف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی پروفیسر افضل حق ، کمانڈر کراچی ریئر ایڈمرل اطہر مختار اور ارشد انیس نے بھی خطاب کیا۔ انور ظہیر جمالی نے کہا کہ مرض کے علاج سے قبل یہ جاننا ضروری ہے کہ یہ کیوں لاحق ہوا ہے۔ معاشرتی بے راہ روی کی جس یلغار کا آج ہمیں سامنا ہے در اصل یہ دو نسلوں کی ناکامیوں کا شاخسانہ ہے۔ انٹرنیٹ کے ذریعے برائیوں کے فروغ پر انہوں نے کہا کہ جدید سائنسی آلات انسانی زندگی کیلئے انتہائی اہمیت کے حامل ہیں۔ ان کے مضر اثرات سے بچنے کیلئے عملی اقدامات ریاست کی ذمہ داری ہے جو ادا نہیں ہو رہی ۔ مہمان خصوصی نے بزم کرن کی کارکردگی پر شاندار الفاظ میں خراج تحسین پیش کرتے ہوئے منتظمین سے کہا کہ مجھے بھی اس قافلے میں شامل کریں۔ صدر بزم کرن ظفر اقبال نے 10سالہ کارکردگی کا اجمالی جائزہ پیش کرتے ہوئے کہا کہ تعلیمی عمل کے ساتھ ساتھ تربیت ناگزیر ہے۔ دولت سے ا?پ سب کچھ خرید سکتے ہیںلیکن آداب و اطوار اور اخلاقیات کیلئے تربیتی عمل سے گزرنا ضروری ہے۔ انہوں نے بتایا کہ بچوں کی جیل میں ہم قیدیوں کو تعلیم کے ساتھ ساتھ پلمبنگ اور کارپینٹری جیسے ہنر سکھا رہے ہیں۔ لائنز ایریا کے قریب ہمارا اسکول اسٹریٹ چلڈرنز کیلئے کام کر رہا ہے جہاں بچوں کو مفت تعلیم، یونیفارم اور کتابوں کی فراہمی کے علاوہ روزانہ کی بنیاد پر نقد رقوم بھی دی جا تی ہیں تا کہ چائلڈ لیبر کا رجحان کم ہو اور بچے تلاش معاش کی فکر سے آزاد ہو کر حصول علم پر توجہ دے سکیں۔ راشد صدیقی نے کہا کہ معاشرتی بے راہ روی کی بڑی وجہ یہ ہے کہ ہماری تمام تر کوششیں دوسروں کو سدھارنے میں صرف ہو رہی ہیں ہم خود اپنی اصلاح پر قطعی آمادہ نہیںہیں۔ اگر ہم صرف جھوٹ بولنے ہی میں احتیاط برت لیں تو بہت سے معاملات میں بہتری آسکتی ہے۔ کرنل اطہر علی خان نے ملٹی میڈیا پر بزم کرن کے اغراض و مقاصد اور ادارے کے تحت جاری پروجیکٹس سے متعلق حاضرین کو آگاہی فراہم کی۔ آخر میں ارشد انیس نے حاضرین و مقررین سے اظہار تشکر کیا۔

Electrolux